سال 2020 میں ان پانچ موبائل گیمز نے اربوں ڈالر کمائے ہیں

بیجنگ:(ویب ڈیسک) سال 2020 میں پانچ گیمز ایسے ہیں جنہوں نے 12 ماہ میں مجموعی طور پر کئی ارب ڈالر سے زائد کی رقم کمائی ہے۔

اس سال کورونا وبا اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے کئی ممالک میں لوگ گھروں تک محدود رہے اور انٹرنیٹ سے منسلک رہے۔ اس سال موبائل گیمز کی مقبولیت میں غیرمعمولی اضافہ ہوا۔ ایک تنظیم سینسر ٹاور نے اعدادوشمار جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ پانچ موبائل گیمز نے سب سے زیادہ منافع حاصل کیا ہے۔

اس فہرست میں اچھی یا بری شہرت والا پب جی گیم پہلے نمبر پر ہے جس نے مجموعی طور پر2.6 ارب ڈالر کمائے ۔ اسطرح مقبول آن لائن ملٹی پلیئر گیم کا اعزاز پب جی کو جاتا ہے جو اس سال غیرمعمولی طور پر مقبول ہوا ۔ ایک اندازے کے مطابق 2019 کے مقابلے میں پب جی کی آمدنی میں 64.3 فیصد اضافہ دیکھا گیا ہے۔

واضح رہے کہ پب جی ان 118 چینی گیمز میں سے ایک ہے جن پر بھارت پابندی عائد کرچکا ہے۔ پاکستان نے بھی اس گیم پر عارضی پابندی عائد کی تھی لیکن بعد ازاں پی ٹی اے نے اس پر سے پابندی ختم کردی تھی۔

دوسرے نمبر پر ٹینسنٹ کمپنی کا تیارکردہ آنر آف کنگز گیم ہے جس نے اس سال 42.8 فیصد اضافے کے ساتھ ڈھائی ارب ڈالر کی رقم کمائی ہے۔

تیسرے نمبر پر پوکے مون گو ہے جس نے 1.2 ارب ڈالر کا منافع حاصل کیا ہے۔ چوتھے نمبر پر مون ایکٹو کمپنی کا گیم کوئن ماسٹر ہے جبکہ پانچویں نمبر پر روبلوکس گیم ہے اور چھٹے نمبر پر مونسٹر اسٹرائک شامل ہے۔

ماہرین کے مطابق توقع ہے کہ اس سال بھی ان گیمز کی مقبولیت برقرار رہے گی۔